پاکستان

دنیا کو پیشگی بتا رہے ہیں بھارت کشمیر میں پلوامہ جیسا ڈرامہ کرسکتا ہے: وزیراعظم عمران خان

اسلام آباد (ویب ڈیسک) وزیراعظم عمران خان نے یکجہتی کشمیر کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آج ہم سب کشمیریوں کے ساتھ کھڑے ہیں، کشمیری اس وقت بہت مشکل وقت سے گزر رہے ہیں۔

 

اسلام آباد میں یکجہتی کشمیر کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ 80لاکھ سے زائد کشمیری چار ہفتوں سے کرفیو کا شکار ہیں، آج یہ پیغام دنیا میں جائے گا جب تک کشمیریوں کو آزادی نہیں ملتی ہم ساتھ کھڑے ہیں، کشمیریوں کی آزادی کے لیے آخری دم تک ہم ساتھ کھڑے رہیں گے ۔

 

وزیراعظم عمران خان نے مزید کہا کہ  آر ایس ایس کے نظرے نے بھارت پر قبضہ کر لیا ہے ، آر ایس ایس کے ہی ممبر نے گاندھی کو قتل کیا تھا،  یورپی اور عرب سربراہان کو بھی مودی اور آر ایس ایس کا نظریہ بتایا ہے، آر ایس ایس اور بی جے پی نہ نہرو کا نظریہ مانتے ہیں نہ بھارت کے آئین کو مانتے ہیں، امریکی صدر اور دیگر ممالک کو بھی مقبوضہ کشمیر کی صورتحال کا بتایا۔ وزیراعظم نے کہا کہ دنیا کو پیشگی بتا رہے ہیں کہ بھارت کشمیر میں پلواما جیسا ڈرامہ کر سکتا ہے۔

 

مودی کو سمجھنے کے لیے آر ایس ایس کا نظریہ سمجھنا ہوگا، آر ایس ایس کی بنیاد مسلمانوں کے خلاف نفرت ہے ، آر ایس ایس بھی دیگر مذاہب کو برابری کا حق نہیں دیتا، آر ایس ایس کا نظریہ ہے کہ ہندو ہی سب سے زیادہ برتر ہیں۔ آر ایس ایس کا نظریہ بھی جرمن نازی ازم کی طرح ہے ، کشمیر کی آزادی تک ہر فورم پر کشمیریوں کی جنگ لڑوں گا، آر ایس ایس کا نظریہ صرف مسلمانوں کیلیے نہیں دیگر مذاہب کیلیے بھی برا ہے، آر ایس ایس کسی کو نہیں مانتے صرف ہندوتوا اور ہندو کو مانتے ہیں ۔

 

وزیر اعظم نے مزید کہا مقبوضہ کشمیر پر مظالم سے توجہ ہٹانے کیلیے بھات پاکستان کیخلاف منفی پروپینگنڈا کرتا ہے، ہماری فوج تیار ہے ، اینٹ کا جواب پتھر سےدیں گے ،  دوسری عالمی جنگ میں 6 کروڑ لوگ مارے گئے تھے ،  آج اگر مودی کے خلاف دنیا کھڑی نہ ہوئی تو پھر بات یہاں نہیں رکے گی،  مودی کشمیر سے توجہ ہٹانے کے لیے کچھ نہ کچھ حرکت آزاد کشمیر میں کرے گا،  مودی کو صاف بتانا چاہتا ہوں آپ کی اینٹ کا جواب پتھر سے دیں گے ،  تمام ممالک کو کہا کہ اگر دنیا کشمیریوں کیلیے نہیں کھڑی ہوگی تو اس کے اثرات تمام دنیا پر پڑیں گے،  مقبوضہ کشمیر میں مظالم کے خلاف دنیا میں مہم چلائیں گے ،  مودی نے کشمیر کو بند کیا ہوا ہے ،وہاں میڈیا کو جانے نہیں دیا جارہا ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button