اہم خبردنیا

سیاہ فام شہری کی پولیس فائرنگ سے ہلاکت کے بعد ایک بار پھر حالات کشیدہ

امریکی ریاست وسکونسن میں سیاہ فام شہری پر پولیس کی فائرنگ سے ایک بار پھر مظاہروں کا سلسلہ شروع ہوگیا

امریکا میں پولیس کے ہاتھوں ایک بار پھر سیاہ فام شہری پر فائرنگ سے حالات کشیدہ ہوگئے ہیں جس کے بعد ریاست وسکونسن میں پرتشدد احتجاجی مظاہروں کا سلسلہ شروع ہوگیا ہے، سیاہ فام شہری  جیکب بلیک اتوار کو پولیس فائرنگ سے زخمی ہوگیا تھا تاہم اب اس کی حالت خطرے سے باہر ہے جب کہ پولیس حکام واقعے کی تحقیقات کررہے ہیں۔

امریکی نشریاتی ادارے کے مطابق پولیس نے سیاہ فام شہری جیکب بلیک پر اس کے 3 بچوں کے سامنے فائرنگ کی جو گاڑی میں بیٹھے ہوئے تھے، واقعے کے خلاف دوسرے روز بھی احتجاجی مظاہروں کا سلسلہ جاری ہے اور مظاہرین کی جانب سے امریکی  پولیس کی کارروائی  پر شدید غم و غصے کا اظہار کیا جارہا ہے۔

سیاہ فام شہری جیکب بلیک پر فائرنگ کے خلاف احتجاج کے دوران مظاہرین نے متعدد گاڑیوں کو آگ لگادی اور کئی عمارتوں کو بھی نذر آتش کردیا، پولیس کی جانب سے مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے آنسو گیس اور واٹر کیننز کا استعمال کیا جارہا ہے جب کہ مظاہروں پر قابو پانے کے لیے ریاست وسکونسن میں 200 نیشنل گارڈز تعینات کردیے گئے ہیں

واضح رہے کہ اتوار کے روز ہی ریاست لیوزیانا میں پولیس نے ایک اسٹور کے باہر سیاہ فام شخص کو گولیاں مارکر قتل کردیا تھا جب کہ 25 مئی کو ایک اور سیاہ فام شہری جارچ فلائیڈ کی ہلاکت پولیس حراست میں اس وقت ہوئی جب ایک پولیس اہلکار نے 9 منٹ تک اس کے گلے کو اپنے گھٹنے تلے دبائے رکھا تھا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button